اسرائیل نے بھی مسئلہ فلسطین کیلئے پاکستان کے موقف کی حمایت کر دی

22  ستمبر‬‮  2022

اسرائیل کے وزیراعظم یائرلاپیڈ نے فلسطینیوں کے ساتھ اسرائیل کے دہائیوں سے جاری تنازع کے دو ریاستی حل پرزوردیا ہےاور اس بات کا اعادہ کیا ہے کہ اسرائیل ایران کو جوہری بم بنانے سے روکنے کیلئے جو کچھ بھی ہوسکا وہ کرے گا۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے سالانہ اجلاس میں جمعرات کو ان کی یہ تقریر امریکی صدر جو بائیڈن کے اگست میں اسرائیل کے دورے کے موقع پرطویل عرصے سے غیرفعال دو ریاستی حل کی حمایت کی بازگشت ہے۔

انہوں نے کہا کہ فلسطینیوں کے ساتھ دو ریاستوں پر مبنی معاہدہ اسرائیل کی سلامتی،اس کی معیشت اور ہمارے  بچوں کے مستقبل کیلئے ایک درست چیز ہے۔یائرلاپیڈ نے مزید کہا کہ کوئی بھی معاہدہ ایک پرامن فلسطینی ریاست سے مشروط ہوگاجس سے اسرائیل کو کوئی خطرہ نہیں ہوگا۔

واضح رہے کہ اسرائیلی رہنماء ماضی میں اقوام متحدہ کے اسٹیج پر اس مسئلے کا ذکر کرنے سے گریز کرتے رہے ہیں اورگذشتہ کئی سال کے بعد کسی اسرائیلی وزیراعظم نے پہلی مرتبہ مشرق اوسط کے دیرینہ تنازع کے دوریاستی حل کی بات کی ہے۔

یاد رہے کہ پاکستان کا بھی فلسطین کے متعلق اصولی موقف دوریاستی فارمولہ ہی ہے، اس کیساتھ پاکستان کا بڑا مطالبہ ہے کہ اسرائیلی افواج کو 1967ء کی جنگ سے پہلے کی سرحدوں پر لوٹنا چاہیے، اور دوریاستی فارمولے کے مطابق فلسطین کا دارالحکومت بیت المقدس ہونا چاہیے۔

سب سے زیادہ مقبول خبریں


About Us   |    Contact Us   |    Privacy Policy

Copyright © 2021 Sabir Shakir. All Rights Reserved