اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل روس اور یوکرین کے درمیان قیدیوں کے تبادلے میں کردار کیلئے ترکیہ کے مشکور

23  ستمبر‬‮  2022

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوتریس نے روس اور یوکرین کے درمیان 200 سے زائد جنگی قیدیوں کے تبادلے میں ترکیہ کے کردار کا شکریہ ادا کیا ہے۔

عالمی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق اپنے بیان میں انتونیو گوتریس نے کہاکہ فروری کو شروع ہونے والی یوکرین روس جنگ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں وزرائے خارجہ کی کوششوں سے ختم ہوتی نظر نہیں آ رہی۔ انہوں نے کہا کہ روسی صدر ولادی میرپیوٹن کے متحرک ہونے کے فیصلے کو خطرناک اور پریشان کن قرار دیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا یہ بے معنی جنگ یوکرین اور پوری دنیا کو لامحدود اور ہولناک نقصان پہنچانے کی طرف دھکیل رہی ہے۔انہوں نے یوکرین کے مشرق میں یفرنڈم کے منصوبے پر بھی انتہائی تشویش کا اظہار کیا۔

سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ نے کہاکہ طاقت کا استعمال کرکے کسی دوسرے ملک کی سرزمین کو ضم کرنا بین الاقوامی قانون اور اقوام متحدہ کے کنونشن کی خلاف ورزی ہے۔انہوں نے کہاکہ یوکرین اور روس کے درمیان 200 سے زائد جنگی قیدیوں کا تبادلہ ایک مثبت پیش رفت ہے اور وہ اس پر ترکیہ اور سعودی عرب کی حکومتوں کا اس معاہدے میں کردار ادا کرنے پر شکریہ ادا کرتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ یوکرین اور روس کے درمیان جولائی میں ترکی کے تعاون سے طے پانے والے اناج کے معاہدے کی بدولت 4.3 ملین میٹرک ٹن سے زیادہ اناج اور خوراک برآمد کی گئی تھی، انتونیو گوٹیرس نے کہا کہ اناج اور خوراک لے جانے والے بحری جہاز افغانستان اور یمن سمیت 29 ممالک کو بھیجے گئے ہیں۔

سب سے زیادہ مقبول خبریں


About Us   |    Contact Us   |    Privacy Policy

Copyright © 2021 Sabir Shakir. All Rights Reserved